میں بھی کافر تو بھی کافر کا “شاندار جواب” حسین بن منصور کے قلم سے!

میں بھی کافر تو بھی کافر کا “شاندار جواب”
حسین بن منصور کے قلم سے!

“ہاں تُو کافر”

ہاں تُو کافر ہاں تُو کافر
تیرے سب ہمدرد بھی کافر

تُو جس روپ میں چھپ کر بولے
تیرا ہر وہ روپ بھی کافر

جھوٹے پر اللہ کی لعنت
تیرا ہر بہروپ بھی کافر

ڈاکن کافر اوشو کافر
بندر کی اولاد بھی کافر

وہ جو نفرت بیچ کے لی ہو
ظلم کی جائیداد بھی کافر

لبرل بھیس میں چھپنے والے
تیرے دانشور بھی کافر

جو بھی ہے گستاخ نبی کا
اس کے سب ہمدرد بھی کافر

ہمدردوں کے بھیس میں پھرتے
تیرے دہشتگرد بھی کافر

موم بتی اور مائیک پہ چلتا
تیرا سب بیوپار بھی کافر

تیرے قلم سے چلنے والا
جھوٹ کا کاروبار بھی کافر

ہمسائیوں سے ملنے والے
نوٹوں کے انبار بھی کافر

عریانی کے ڈیلر ہیں جو
ہاں وہ سب فنکار بھی کافر

فتنوں کا جو کھیل رچائیں
ہاں وہ سب اخبار بھی کافر

اللہ کا انکار کریں جو
عقل کے دعویدار بھی کافر

جن کی تھاپ پہ عزت ناچے
ہاں وہ طبلہ ڈھول بھی کافر

بچیوں کو نیلام کرے جو
پیار بھرا وہ بول بھی کافر

ملحد کافر منکر کافر
ہاں وہ کافر ہاں تو کافر

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

میں بھی کافر تو بھی کافر کا “شاندار جواب” حسین بن منصور کے قلم سے!” ایک تبصرہ

اپنا تبصرہ بھیجیں