مزاح اور حسِّ مزاح …. سعید الرحمن رحیمی

مزاح ایک ایسی حِس ہے جو ہر بندے میں موجود ہوتی ہے ..بندہ جتنا بھی سنجیدہ اور کم گو ہو. حد سے زیادہ خاموشمزاج ہی کیوں نہ ہو. کہیں ناں کہیں اس کی مزاحیہ حِسپھڑکتی ضرور ہے… اور جب پھڑکتی ہے ناں تو پھر بڑے بڑےمزاح نگاروں کو بھی پھڑکا دیتی ہے…

مزاح کرنا . مزاحیہ گفتگو کرنا . مزاحیہ پروگرام کرنا یا پھرمزاحیہ پروگرامز میں شرکت کرنا . مزاحیہ تحریریں لکھنا .کسی بھی زاویہ سے مذموم نہیں بلکہ قابلِ تعریف ہے…

مجموعی طور پہ اگر دنیا بھر کے ممالک کے میڈیا کو دیکھیں تو ہر ملک میں لوگوں کو مزاحیہ پروگرامز میڈیا پہ دکھائےجاتے ہیں… انداز بھلے ہی مختلف ہوں. شاید کچھ درست نہبھی ہوں لیکن مزاحیہ پروگرامز ہیں ضرور… کیونکہ مزاح بندے کی فطری ضرورت ہے…( یہ میرا ذاتی خیال ہے )…

مزاح اور مذاق دو الگ چیزیں ہیں… تنقید ان دونوں سے بھیالگ تھلگ ہے… جبکہ جگت بازی مزاح کا ایک منفرد پہلو ہے…ہم دیکھتے ہیں کہ کہیں پہ تنقید بھرپور ہو رہی ہوتی ہے اورآخر میں یہ کہہ کر کہ ” یار میں مزاح کر رہا تھا ” معاملے کوختم کر دیا جاتا ہے…ہمارے کئی احباب اس طرح کے مزاحیہ فیس بک گروپس اورفیس بکی صفحات. میسینجر گروپ یا واٹس اپ گروپ بناکراس مزاح اور حسِ مزاح کو فروغ دے رہے ہیں… یقینًا سب احباب اپنے تئیں نیک نیتی اور خلوص سے یہ سب کرتے ہیں. میرا کہنا صرف یہ ہے کہ ” مزاح ” اور ” مذاق ” میں فرق رکھ کر کے آگے بڑھیں گے تو مثبت اور بہتر نتائج ملیں گے اور آپ کی محنت رائیگاں نہیں جائے گی…

کیونکہ ” مزاح ” کرنا یاسننا قابلِ مذمت کسی صورت نہیں.ہاں اس میں شائستگی بہرحال ضروری ہے. جبکہ ” مذاق ” کسی بھی صورت میں قابلِ تعریف نہیں ہے. بھلے ہی اسمیں کتنی ہی شائستگی ہو… جگت بازی ایک الگ تھلگ فن ہے. جسے آپ مزاح اور مذاق دونوں کا مرکب بھی کہہ سکتے ہیں اور دونوں کی ضد بھی. جگت بازی خاص تر احباب جن سے بےحد بےتکلفی ہو وہاں ہوتی ہے. ہر جگہ جگت بازی نہیں کی جا سکتی. جبکہ مزاح محافل میں بھی . اپنوں میں بھی اور بیگانوں میں بھی کیجا سکتی ہےکیونکہ اسمیں محض دل لگی مطلوب ہوتی ہے..

میرے وہ مخلص احباب جو اس طرح کا پلیٹ فارم بنانے کا ارادہ رکھتے ہیں وہ میری ان ناتجربہ کار باتوں کو ایک بار ضرور پڑھ لیں. شاید کوئی ایک آدھ بات کام کی نکل آئے… یاد رکھئےکوئی بھی کام یا پلیٹ فارم . پیج یا گروپ . بھلے جس بھی مقصد کے لئے بنایا جائے.بنانے والا مخلص بھی ہو. مگر نظم وضبط. دستورومنشور. منظم لائحہ عمل کے بغیر شروع کیا جائے.اس میں کامیابی ملنا مشکل ہوتی ہے…

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں