طیبہ

طیبہ تشدد کیس میں اہم پیش رفت

گذشتہ دنوں طیبہ نامی بچی کو حاضر سروس جج کے گھر سے تشدد زدہ حالت میں برامد کیا گیا تھا. طیبہ کو حاضر سروس جج کی بیوی نے پیسے چوری کرنے کے الزام میں بیہمانہ تشدد کا نشانہ بنایا تھا. انسانی حقوق کی تنظیموں اور میڈیا نے اس ظلم کے خلاف آواز بلند کی جس کے نتینےمیں مقامی تھانے میں جج کے بیوی کے خلاف مقدمہ درج کر لیا.

اس سب کے باوجود طیبہ کے والد نے جج کی بیوی کو معاف کر دیا، اور بچی کو لے کر غائب ہو گیا. اس معافی نامے پر سپریم کورٹ آف پاکستان نے سوموٹو ایکشن لیتے ہو ئے معافی نامے کو کالعدم قرار دیا ہے اور بچی کو انصاف دلانے کے لئے ہر ممکن مدد کی یقین دہانی کرائی ہے.

پولیس نے بچی کی بازیابی کے لئے فیصل آباد، جڑانوالہ، لاہور، راولپنڈی اور اسلام آباد میں مختلف مقامات پر چھاپے مارے ہیں. اس ضمن میں طیبہ کی پھوپھی کو حراست میں لیاگیا ہے.

اگر آپ کو تحریر پسند آئی ہے تو اپنے احباب کے ساتھ بھی شئیر کریں!

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں