شخصیت سازی

چوکا، چھکا یا آؤٹ – ساجد محمود

کرکٹ میچ میں باؤلر کی ایک ایک بال پر کوشش ہوتی ہے کہ بیٹسمین کو کنفیوز کرے، پریشان کرے، کھیلنے نہ دے، اسکور نہ کرنے دے، بلکہ اسے آوٹ یعنی ناکام کر کے میدان سے باہر نکال دے۔

اگر بیٹسمین اس کی بال کو کھیل جائے تو اس کے دیگر ساتھی یعنی فیلڈرز کی کوشش ہوتی ہے کہ کم سے کم اسکور بنا پائے پھر وہ بال پکڑ کر اس طرح واپس پھینکتے ہیں کہ بیٹسمین کو رن آوٹ کر دیں یعنی وہ بھی مل کر بیٹسمین کو ناکام کرنے کی بھرپور کوشش کرتے ہیں۔

پھر باولر اور کپتان آپس میں مشورہ کر کے فیلڈرز کی جگہ تبدیل کرتےرہتے ہیں اور اس چال میں بعض اوقات بیٹسمین پر محض نفسیاتی دباؤ ڈالنا بھی مقصود ہوتا ہے ۔
یہ تو رول ہے باولنگ اور فیلڈنگ کرنے والوں کا۔

اب بیٹسمین کا کیا رول ہوتا ہے ؟

اس کا کام ہوتا ہے کہ سب سے پہلے یہ سمجھ لے یقین کر لے کہ یہ باولر اور فیلڈرز آئے ہی اس لیے ہیں کہ مجھے ناکام کر دیں.

پھر ہر بال پر پہلے تو اس کا کام ہوتا ہے کہ ہر فیلڈر کی جگہ دیکھ بھال کر سمجھ لے کہ کون کہاں کھڑا ہے؟

پھر خود کو اچھی طرح دیکھ لے کہ درست جگہ کھڑا ہے یا نہیں؟

پھر جب بال آئے تو خوب دھیان لگا کر چیک کرے کہ کیسی بال ہے؟

کیا اس پر چھکے کی ٹرائی کرنی ہے یا چوکے کی ۔ یا پھر کہیں گیپ میں شاٹ کھیل کر رننگ کرنی ہے ، یا سنگل ہی لینا ہے ، یا صرف کھیل کر روکنا ہے ، یا ایسی تو نہیں کہ کھیلنا بھی نہیں اور اسے جانے دینا ہے ۔

جب بھی وائیڈ بال آئے گی تو سمجھدار بیٹسمین اسے جانے دیتا ہے یہ سوچ کر کہ باؤلر نے جان بوجھ کر ایسی بال دی ہے کہ میں اسے کھیلنے کی غلطی کروں اور آوٹ ہونے کے چانسز زیادہ ہو جائیں.
اب اس پورے گیم کو ذرا اپنی لائف میں لے آئیں!

آپ کے خاندان میں ، گلی محلے میں ، دوستوں میں کلاس فیلہوز میں کام کاج پر، کتنے ہی ایسے لوگ ہیں جو آپ کو ناکام کرنا چاہتے ہیں.

آپ کا کام ہے کہ ہر ایک کو پہچان لیں کہ کون کس طرح ناکام کرنے کا گیم کھیلتا ہے کس کی کیا عادت ہے رویہ ہے چال چلتا ہے.

پھر ان کے ہربْرے روئیے ہر چال ہر بری بات پر لازمی نہیں کہ آپ جواب دیں ، اسے کھیلیں ، بلکہ اسے جانے دیں ، جب آپ کی اپنی مرضی پسند اور سہولت کی بال آئے تو بڑے آرام سے اسکور کریں۔ بْرے حالات میں آپ کا کام ہے وکٹ پر کھڑے رہیں اور سنگلز لیتے رہیں ۔ بلکہ ایک سمجھدار اور ذمہ دار بیٹسمین کی طرح دوسرے اینڈ پر موجود اپنے ساتھ کھیلنے والے بیٹسمین کو بھی سہارا دیجیے کہ اگر وہ باقاعدہ بیٹسمین نہیں ہے تو ہر خطرناک باؤلر کے اوور کی آخری گیند پر سنگل لے کر اگلے اوور کو زیادہ سے زیادہ خود کھیلنے کے مواقع بنائیں اور اسے خطرناک باؤلر سے بچائیں۔

اب ہم نے اپنے خاندان میں دوستوں میں فیلوز میں تلاش کرنا ہے کہ ہمارے لیے کون کون باؤلر فیلڈرز کا رول پلے کر رہے ہیں اور کون ان سب کا کپتان ہے؟
اسی پر قرآن نے کہا کہ جاہلوں کے پاس گزر ہو تو سلام کر کے گزر جاو ان سے الجھو نہیں.

ساجد محمود

اگر آپ کو تحریر پسند آئی ہے تو اپنے احباب کے ساتھ بھی شئیر کریں!

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں